Official Website

اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزیراعظم کو خفیہ دستاویزات پبلک کرنے سے روک دیا

70

اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزیراعظم عمران خان کو خفیہ دستاویزات پبلک کرنے سے روک دیا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ایک شہری کی درخواست پر تحریری حکم نامہ جاری کیا۔  ہائیکورٹ نے تحریری حکم نامے میں وزیراعظم کے حلف کا حوالہ دیا اور کہا کہ امید ہے کہ وزیراعظم اپنے حلف کی خلاف ورزی نہیں کریں گے۔

عدالت کا کہنا تھاکہ اعتماد ہے کہ وزیراعظم ایسی معلومات افشا نہیں کریں گے جو ملکی مفاد کے خلاف ہو۔

حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ حلف اورآفیشل سیکرٹ ایکٹ وزیراعظم کو پابند بناتا ہے کہ اس سے بالاتر کوئی فیصلہ نہ کریں۔

فیصلے میں عدالت نے آئین کے آرٹیکل 91 شق 5 اور آفیشل سیکرٹ ایکٹ کی شق 5 کا حوالہ دیا اور کہا کہ اعتماد ہے بطور منتخب وزیراعظم وہ آفیشل سیکرٹ ایکٹ کی شق5 کی خلاف ورزی نہیں کریں گے اور آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے تحت کوئی معلومات افشا نہیں کریں گے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے مطابق بلاجواز روکنے کا حکم جاری کرنا منتخب وزیراعظم پر عدم اعتماد کو ظاہر کریگا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزیر اعظم کو سیکریٹ دستاویز پبلک کرنے سے روکنے کی درخواست نمٹا دی۔