Official Website

انسانی پھیپھڑوں میں بھی مائیکرو پلاسٹک کا انکشاف

85

لندن: برطانوی سائنسدانوں نے انسانی پھیپھڑوں میں پلاسٹک کے انتہائی باریک ٹکڑے یعنی ’’مائیکرو پلاسٹک‘‘ بھی دریافت کیے ہیں جو ایک تشویشناک انکشاف ہے۔

واضح رہے کہ پلاسٹک کے جن ٹکڑوں کا سائز 0.1 ملی میٹر (100 مائیکرومیٹر) یا اس سے کم ہوتا ہے انہیں ’’مائیکرو پلاسٹک‘‘ جبکہ ان سے بھی مختصر، 0.0001 ملی میٹر (100 نینومیٹر) جسامت والے پلاسٹک کے ٹکڑوں کو ’’نینو پلاسٹک‘‘ کا سائنسی نام دیا گیا ہے۔

اب تک کی تحقیق سے انسانی خون، پھیپھڑوں، جگر، تلی اور گردوں میں مائیکرو پلاسٹک کے ٹکڑے دریافت ہوچکے ہیں۔
یونیورسٹی آف ہل، برطانیہ کی تازہ تحقیق اسی سلسلے کی ایک اور کڑی ہے جس کے نتائج ریسرچ جرنل ’’سائنس آف دی ٹوٹل اینوائرونمنٹ‘‘ کے تازہ شمارے میں آن لائن شائع ہوئے ہیں۔

اس تحقیق کےلیے زندہ انسانوں کے پھیپھڑوں سے بافتوں (ٹشوز) کے 13 نمونے لیے گئے اور ان سب میں مائیکرو پلاسٹک کی موجودگی کا انکشاف ہوا۔