Official Website

پاکستان کو سعودی عرب سے 3 ارب ڈالر موصول ہوگئے، شوکت ترین

8

اسلام آباد: مشیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ سعودی عرب سے پاکستان کو 3 ارب ڈالر موصول ہوگئے۔

وزیراعظم کے مشیر خزانہ شوکت ترین نے ٹویٹ میں کہا ہے کہ سعودی عرب نے 3 ارب ڈالر ڈپازٹ کے طور پر دئیے ہیں جو اسٹیٹ بینک کو موصول ہوگئے ہیں۔

مشیر خزانہ شوکت ترین نے ڈپازٹ کی رقم موصول ہونے پر سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اورسعودی حکومت کا شکریہ ادا کیا ۔

بینک حکام کے مطابق سعودی عرب سے 3 ارب ڈالر موصول ہونے کے بعد زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ ہوگیا ہے اس کے ملکی معیشت پر مثبت اثرات ہوں گے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان کے حالیہ دورہ سعودی عرب کے دوران پاکستان کے لیے 4.2 ارب ڈالر کے پیکیج کی یقین دہانی کروائی گئی تھی۔ سعودی عرب پاکستان کو سالانہ 1.2 ارب ڈالر کا ادھار تیل بھی فراہم کرے گا جس کے لیے طریقہ کار کو حتمی شکل دی جا رہی ہے۔

پاکستان کو 3 ارب روپے کے کیش ڈیپازٹس سخت شرائط پر فراہم کیے گئے ہیں، پاکستان کو کیش ڈیپازٹس پر سالانہ 4 فیصد اور ادھار تیل کی فراہمی پر 3.8 فیصد سود ادا کرنا ہوگا۔ پاکستان کو ایک سال بعد رقم واپس ادا کرنا ہوگی۔

سعودی عرب تین دن کے نوٹس پر رقم کی واپسی کا بھی تقاضا کرسکتا ہے اور کچھ روز قبل، سعودی فنڈ فار ڈویلپمنٹ اور اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے درمیان تین ارب ڈالر قرض ڈپازٹ معاہدے پر دستخط کیے گئے تھے۔

معاہدے کے تحت سعودی فنڈ اسٹیٹ بینک کے پاس 3 ارب ڈالر رکھوائے گا جو اسٹیٹ بینک کے زرمبادلہ ذخائر کا حصہ بن جائے گی۔ مذکورہ رقم سے نہ صرف پاکستان کے زرِ مبادلہ ذخائر مستحکم ہوں گے بلکہ کووڈ 19 کی وبا کے منفی اثرات دور کرنے میں مددگار ثابت ہوگی۔