Official Website

’27 فروری سے پہلے بلدیاتی قانون کا معاملہ حل نہ ہوا تو بلاول ہاؤس پرپڑاؤ ڈالیں گے’

32

امیر جماعتِ اسلامی سراج الحق نے حکومت سندھ کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ 27 فروری سے پہلے بلدیاتی قانون کا معاملہ حل نہ ہوا تو سندھ اسمبلی کے سامنے جاری مارچ بلاول ہاؤس پرپڑاؤ ڈالے گا۔

سندھ کے بلدیاتی قانون کے خلاف کراچی میں جماعت اسلامی کا سندھ اسمبلی کے باہر دھرنا 25 ویں روز بھی جاری ہے۔

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو کہا ہے کہ 27 فروری سے پہلے بلدیاتی قانون کا معاملہ حل کردیں ورنہ یہ مارچ بلاول ہاؤس پرپڑاؤ ڈالے گا۔

سراج الحق نے کہا کہ سندھ حکومت کے کالے بلدیاتی قانون کے خلاف مرد و خواتین، بچے، بوڑھے اور جوان کئی روز سے دھرنا دیے بیٹھے ہیں لیکن سندھ کے سنگ دل حکمرانوں کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی۔

امیر جماعت اسلامی کا مزید کہنا تھا کہ دھرنا جتنا طویل ہوگا نقصان پیپلزپارٹی اور حکومت سندھ کو ہو گا۔

اس موقع پر جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ حکومت سندھ نے بلدیاتی اداروں کو اپنے قبضے میں لے لیا ہے،کوئی بھی اکثریت آئین کے برخلاف فیصلہ نہیں کر سکتی۔