Official Website

نوازشریف کی رپورٹس کا جائزہ لینے کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل

48

لاہور: محکمہ داخلہ پنجاب نے مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف کی طبی رپورٹس کا جائزہ لینے کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل دے دیا۔

محکمہ داخلہ پنجاب کے ذرائع کا کہنا ہےکہ میڈیکل بورڈ کا سربراہ پروفیسر ڈاکٹر عارف ندیم کو مقرر کیا گیا ہے اور یہی بورڈ پہلے سے نوازشریف کی صحت کی رپورٹس کا جائزہ لے رہا ہے۔

ذرائع کے مطابق 9 رکنی بورڈ 5 دن کے اندر اپنی رپورٹ پیش کرے گا، اٹارنی جنرل آفس کے لیٹرپرمحکمہ داخلہ پنجاب نے نوازشریف کی صحت سے متعلق نئی دستاویزات محکمہ صحت کو بھجوادی ہیں جب کہ سیکرٹری اسپیشلائزڈ ہیلتھ میڈیکل بورڈ کو ہائیکورٹ میں جمع ہونیوالی دستاویزات بھجوائے گا۔

محکمہ داخلہ پنجاب کا کہناہےکہ پنجاب حکومت کے قائم کیےگئے میڈیکل بورڈ نے نواز شریف کی مزید رپورٹس طلب کی تھیں، اٹارنی جنرل آفس کی جانب سے ملنے والے خط میں کہا گیا کہ نئی دستاویزات پر بورڈ سے رائے لی جائے۔

نوازشریف کی رپورٹ میں کیا کہا گیا؟

واضح رہےکہ امریکی ڈاکٹر فیاض شال نے نواز شریف کی صحت سے متعلق رپورٹ تیار کی ہے جو 28 جنوری کو لاہور ہائیکورٹ میں جمع کرائی گئیں۔

رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر نے نوازشریف کو سفر کرنے سے منع کیا ہے اور انہیں علاج مکمل کرائے بغیر پاکستان جانے سے بھی منع کیا گیا ہے۔

نوازشریف کی میڈیکل رپورٹ کا عکس

رپورٹ میں کہا گیا ہےکہ نواز شریف انجیو گرافی کرائے بغیرلندن سے نہ جائیں وہ علاج کے بغیر پاکستان گئے تو ان کی حالت بگڑسکتی ہے۔

میڈیکل رپورٹ میں مزید کہا گیا ہےکہ نواز شریف اپنی ادویات جاری رکھیں اور کھلی فضا میں چہل قدمی کریں، چہل قدمی کے دوران کورونا سے بچاؤکے اقدامات بھی کریں ، دنیا میں موجودہ کورونا وائرس کی عالمی وبا کو دیکھتے ہوئے نواز شریف کو ہر طرح کے سفر /یا عوامی مقامات جیسے ہوائی اڈوں پر جانے سے گریز کرنا چاہیے۔