Official Website

ویڈیو: ماں نے تین سالہ بیٹی کو ریچھ کی کچھار میں پھینک دیا

37

چڑیا گھر میں ایک خاتون نے اچانک اپنی تین سالہ بیٹی کو بھورے ریچھ کی کچھار میں پھینک دیا۔

یہ واقعہ ازبکستان کے دارالحکومت تاشقند کے ایک چڑیا گھر میں پیش آیا۔ خاتون کا نام ظاہر نہیں کیا گیا تاہم اسے حراست میں لے لیا گیا ہے۔

اس واقعے کی ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ اوپر موجود لوگ ریچھ کو دیکھ رہے ہیں جبکہ ریچھ 16 فٹ نیچے اپنی کچھار میں گشت کر رہا ہے۔

اس دوران ایک خاتون اپنی تین سالہ بیٹی کو اچانک نیچے پھینک دیتی ہے جس پر آس پاس موجود لوگ گھبرا جاتے ہیں جبکہ چڑیا گھر کا عملہ فوری طور پر بچی کو بچانے کیلئے ریچھ کے پنجرے کے اندر داخل ہوتا ہے۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ بچی کو اپنی کچھار میں گرتا دیکھ کر ریچھ بھی اس کی جانب لپکتا ہے اور کچھ دیر بچی کو سونگھتا ہے اور پھر منہ پھیر کر دوسری طرف چلا جاتا ہے۔

اس موقع پر عملے کے 5 ارکان ریچھ کو بہلا کر ایک کمرے کی جانب لے جاتے ہیں اور ایک اہلکار فوری طور پر بچی کو اٹھاکر نکل جاتا ہے۔

چڑیا گھر انتظامیہ کے مطابق ریچھ کا نام زو زو ہے اور اس نے بچی کو کوئی نقصان نہیں پہنچایا، یہ سب کچھ اتنی جلدی ہوا کہ آس پاس موجود لوگوں کو خاتون کو روکنے کا موقع ہی نہ ملا۔

چڑیا گھر کے ترجمان کا کہنا ہے کہ خاتون نے ایسا کیوں کہ اس کی وجہ سامنے نہیں آئی ہے البتہ انہیں حراست میں لے لیا گیا ہے اور ان پر اقدام قتل کا مقدمہ چلایا جائے گا جس میں 15 برس قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

اطلاعات کے مطابق بچی اسپتال میں ہے اور اس کی حالت خطرے سے باہر ہے البتہ اونچائی سے گرنے کی وجہ سے اس کے سر پر گہری چوٹ آئی ہے۔ ڈاکٹرز اس کی مسلسل نگرانی کر رہے ہیں۔