Official Website

ملک بھر میں مہنگائی کی شرح میں 1.35 فیصد اضافہ

35

اسلام آباد: ملک بھر میں ہفتہ وار بنیادوں پر مہنگائی کی شرح میں 1.35 فیصد اور 33 اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔

وزیر خزانہ شوکت ترین کی زیر صدارت نیشنل پرائس مانیٹرنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزراء، مشیروں، معاونین خصوصی اور وزارتوں کے سیکرٹریز نے شرکت کی ۔

اجلاس میں مشیر خزانہ ڈویژن نے بریفنگ دی کہ ہفتہ وار بنیادوں پر مہنگائی میں 1.35 فیصد، 33 اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ اور 6 کی قیمتوں میں کمی اور کل 23 اشیاء کی قیمتوں میں استحکام ریکارڈ کیا گیا۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ انڈے 0.04 فیصد، آلو 0.05 اور پیاز 0.03 فیصد سستا ہوا، ٹماٹر 0.97، چکن 0.40 اور لہسن 0.02 مہنگا ہوا جبکہ دال ماش، دال مونگ، چینی اور بعض دیگر اشیاء سستی ہوئیں۔

ملک بھر میں آٹے کی قیمتوں میں استحکام برقرار ہے، کوئٹہ میں آٹے کی قیمتوں اضافے کا رجحان دیکھا گیا ہے،ملک میں گندم کی وافر ذخائر بھی موجود ہیں جبکہ کمیٹی نے اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ملک میں چینی کے ذخائر اور قیمتوں کا بھی جائزہ لیا گیا ۔

اجلاس کے اعلامیہ کے مطابق وزیر خزانہ نے قیمتوں میں استحکام اور آسان دستیابی کیلئے چینی کے ذخائر کو تقویت دینے، دالوں کی قیمتوں میں کمی کیلئے فوری اقدامات کی ہدایت جاری کی جبکہ اجلاس کو مختلف دالوں کی دستیابی اور قیمتوں کے بارے میں بھی بریفنگ دی گئی ۔

اعلامیہ کے مطابق اجلاس کو خوردنی تیل کی دستیابی اور قیمتوں بارے بھی بریفنگ دی گئی جبکہ کمیٹی نے عالمی مارکیٹ کے مطابق مقامی قیمتوں میں بھی کمی یقینی بنانے کی ہدایت کی ۔

اجلاس کو بھارت، سری لنکا اور بنگلا دیش میں قیمتوں کا جائزہ بھی پیش کیا گیا، یوٹیلیٹی سٹورز کو روزانہ استعمال کی اشیاء کی فراہمی یقینی بنانے، شرکاء کو سستا سہولت بازاروں میں قیمتوں پر کنٹرول کیلئے ہر ممکن ٹھوس اقدامات کی ہدایت کی۔