Official Website

98 سالہ خاتون نے اسکول میں داخلہ لیکر سب کو حیران کردیا

70

تعلیم حاصل کرنے کی کوئی عمر نہیں ہوتی، اس بات کو کینیا سے تعلق رکھنے والی 98 سالہ خاتون نے سچ ثابت کردکھایا ہے۔

برطانوی خبررساں ایجنسی رائٹرز کے مطابق کینیا کے علاقے ندالات کی 98 سالہ پریسیلا سیٹینی نے تعلیم حاصل کرنے کیلئے مقامی پرائمری اسکول میں داخلہ لے لیا۔

رپورٹس کے مطابق چھٹی کلاس کی طالبہ پریسیلاکا کہنا ہے کہ انہوں اپنے پوتے اور پوتیوں کے لیے ایک اچھی مثال قائم کرنے کیلئے اسکول میں داخلہ لیا ہے۔

چھٹی کلاس کی طالبہ پریسیلاکا کہنا ہے کہ انہوں اپنے پوتے اور پوتیوں کے لیے ایک اچھی مثال قائم کرنے کیلئے اسکول میں داخلہ لیا ہے —فوٹو: رائٹرز
چھٹی کلاس کی طالبہ پریسیلاکا کہنا ہے کہ انہوں اپنے پوتے اور پوتیوں کے لیے ایک اچھی مثال قائم کرنے کیلئے اسکول میں داخلہ لیا ہے —فوٹو: رائٹرز
98 سالہ پریسیلا نے مزید بتایا کہ میری خواہش ہے کہ میں ڈاکٹر بنوں کیونکہ میں پہلے ایک دائی تھی جبکہ انہوں نے کہا کہ میرے بچوں نے میرے اسکول میں داخلے کے فیصلے پر میرا بھرپور ساتھ دیا۔

وہ تعلیم حاصل کرنے کے ساتھ اپنے پوتے ، پوتیوں کے عمر کے بچوں کے ساتھ دیگر سرگرمیوں میں بھی حصہ لیتی ہوں اور کافی لطف اندوز ہوتی ہیں۔ فوٹو: رائٹرز
وہ تعلیم حاصل کرنے کے ساتھ اپنے پوتے ، پوتیوں کے عمر کے بچوں کے ساتھ دیگر سرگرمیوں میں بھی حصہ لیتی ہوں اور کافی لطف اندوز ہوتی ہیں۔ فوٹو: رائٹرز
خبر ایجنسی کے مطابق پریسیلا کا کہنا ہے کہ میری پوتی نے حاملہ ہونے کی وجہ سے اسکول جانا چھوڑ دیا جس پر میں نے پوتی سے مذاق کرتے ہوئے پوچھا کہ کیا اسکول میں فیس کی رقم ابھی باقی ہے ؟

پوتی کی جانب سے ہاں کا جواب ملنے کے بعد پریسیلا نے پوتی کی جگہ اسکول جانے کا فیصلہ کیا۔

ان کا کہنا ہے کہ وہ تعلیم حاصل کرنے کے ساتھ اپنے پوتے ، پوتیوں کے عمر کے بچوں کے ساتھ دیگر سرگرمیوں میں بھی حصہ لیتی اور کافی لطف اندوز ہوتی ہیں۔

رپورٹس کے مطابق مشرقی افریقی ملک کی حکومت نے 2003 میں پرائمری اسکولوں کو سبسڈی دینا شروع کی جس کے بعد سے ان بوڑھے افراد کو تعلیم حاصل کرنے کا موقع ملا جو جوانی میں اس نعمت سے محروم رہے۔