Official Website

وفاقی کابینہ نے پہلی کلاؤڈ پالیسی اور ذاتی ڈیٹا کی حفاظت کا بل منظور کرلیا

75

اسلام آباد: وفاقی کابینہ نے پہلی کلاؤڈ پالیسی اور ذاتی ڈیٹا کی حفاظت کا بل منظور کرلیا جو قومی اسمبلی سے منظوری کے بعد قانون بن جائے گا۔

 ڈیجیٹل دنیا سے خود کو ہم آہنگ کرنے کیلئے وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی) نے پہلی کلاؤڈ پالیسی اور پرسنل ڈیٹا کی حفاظت سے متعلق بل تیار کر کے وفاقی کابینہ کو منظوری کے لیے پیش کیا، جسے آج کابینہ نے منظور کرلیا۔

وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی امین الحق نے کہا کہ اہم ترین بل اور پالیسی کی منظوری پر وزیراعظم اور کابینہ اراکین کے شکر گزار ہیں، پرسنل ڈیٹا پروٹیکشن بل پارلیمنٹ سے منظوری کے بعد قانون بن جائے گا۔

انہوں نے بتایا کہ بل کامقصد شہریوں، سرکاری ونجی اداروں کے آن لائن ڈیٹا کی پرائیویسی یقینی بنانا ہے جبکہ تمام متعلقہ ادارے ڈیٹا، خدمات اورسسٹم کی سائبر سیکیورٹی سےہم آہنگی یقینی بنائیں گے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ کلاؤڈ فرسٹ پالیسی وفاقی وزارتوں، محکموں، خودمختار اداروں کا احاطہ کرے گی، وزارتوں و اداروں کے مختلف ڈیٹا سینٹرز پربھاری اخراجات اوراپ گریڈیشن کا عمل مشکل ہوتا ہے، وفاقی وزارتوں اورمحکموں کےڈیٹا سینٹرزمطلوبہ تقاضوں سےآراستہ کلاؤڈزپرمرحلہ وارمنتقل ہوں گے۔

امین الحق کا کہنا تھا کہ اس پالیسی کے بعد سرکاری اخراجات میں کمی، ڈیٹا کا تحفظ اوراداروں کی کارکردگی میں اضافہ ہوگا، ترقی یافتہ ممالک کی حکومتیں بھی سرکاری محکموں کے ڈیٹا کیلئے کلاؤڈزخدمات حاصل کرتی ہیں، منظوری کے بعد وزارت آئی ٹی کےتحت کلاؤڈ بورڈ ،کلاؤڈ آفس،کلاؤڈ ایکوزیشن آفس کا قیام عمل میں لایا جائے گا، جس کے ممبران میں سیکریٹری آئی ٹی چیئرمین،چاروں صوبوں کے چیف سیکریٹریزاور2 آئی ٹی ماہرین شامل ہوں گے۔

سید امین الحق کا کہنا تھا کہ کلاؤڈ آفس، کلاؤڈ سروس پرووائیڈرزکی ایکریڈیشن، کوالٹی، سیکیورٹی اور محکمانہ آئی ٹی امور کی نگرانی کرے گا، کلاؤڈ ایکوزیشن آفس مختلف اداروں کو کلاؤڈسروسنگ کے حصول میں معاونت فراہم کرے گا۔

بعد ازاں وزیراعظم عمران خان سے وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی سید امین الحق ، وزیر قانون ڈاکٹر فروغ نسیم اور وزیر بحری امور سید علی حیدر زیدی کے ہمراہ ملاقات کی، جس میں انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی کمیونیکیشنز کارکردگی پر بریفنگ دی گئی۔

وزیر اعظم عمران خان نے نوجوانوں کے لیے روزگار کے وسیع مواقع پیدا کرنے کے لیے ملک میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے تمام ممکنہ اقدامات اٹھانے کی بھی ہدایت کی۔

علاوہ ازیں ملاقات میں کراچی میں جاری مختلف ترقیاتی سکیموں سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا گیا، جس میں وزیراعظم نے کراچی میں جاری تمام ترقیاتی اسکیموں پر کام کی رفتار کو تیز کرنے کی ہدایت بھی کی۔