Official Website

پیپلز پارٹی کا لانگ مارچ آج بلاول کی قیادت میں کراچی سے اسلام آباد کیلئے روانہ ہو گا

43

پیپلز پارٹی کے حکومت مخالف لانگ مارچ کی تیاریاں مکمل ہو گئی ہیں، مارچ آج پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی قیادت میں کراچی سے اسلام آباد کے لیے روانہ ہو گا۔

لانگ مارچ کے لیے پیپلز پارٹی کے جیالے پُرجوش ہیں اور کراچی شہر میں جگہ جگہ پیپلز پارٹی کے جھنڈے اور قد آور پینا فلیکس آویزاں کیے گئے ہیں۔

لانگ مارچ میں شرکت کے لیے شہر بھر سے شرکا نمائش پر جمع ہوں گے اور جلوس کی شکل میں روانہ ہوں گے۔

متبادل ٹریفک پلان

ٹریفک پولیس نے لانگ مارچ کے پیش نظر متبادل ٹریفک پلان ترتیب دیا ہے۔

ٹریفک پولیس کا کہنا ہے کہ گرومندر سے نمائش جانے والی سڑک عام عوام کے لیے بند ہو گی لہذا شہری گرومندر سے سولجر بازار اور جمشید روڈ سے جیل روڈ فلائی اوور کا راستہ استعمال کریں۔

سوسائٹی چورنگی سے نمائش تک عام پبلک کو جانے کی اجازت نہیں ہو گی، شہری سوسائٹی چورنگی سے دائیں جانب کشمیر روڈ کا راستہ اختیار کر سکتے ہیں جبکہ یونیورسٹی روڈ سے آنے والے ٹریفک کو جیل چورنگی شہید ملت کی طرف موڑا جائے گا اور جیل چورنگی سے جمشید روڈ آنے والے ٹریفک کو سولجر بازار کی طرف موڑا جائے گا۔

ٹریفک پولیس کے مطابق ریگل چوک سے نیو ایم اے جناح کوریڈور 3 تک پبلک کو جانے کی اجازت نہیں ہو گی لہذا شہری صدر دواخانہ سے براستہ لکی اسٹار شارع فیصل کا راستہ اختیار کر سکتے ہیں۔

ادارے غیر جانبدار رہے تو تحریک عدم اعتماد کامیاب ہو گی: بلاول بھٹو زرداری

بلاول بھٹو زرداری کہتے ہیں کہ پیپلز پارٹی کا مارچ غیر جمہوری حکومت پر جمہوری حملہ ہے، ادارے غیر جانبدار رہے تو تحریک عدم اعتماد کامیاب ہو گی۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کی صورت میں آنے والی حکومت کی محدود ذمے داری ہو گی، اسے فوری طور پر صاف اور شفاف الیکشن کروانا ہوں گے، نہیں چاہتے کہ لمبے وقت کے لیے کوئی حکومت آئے۔