Official Website

واوڈا کی خالی سینیٹ نشست پر سندھ اسمبلی میں ووٹنگ، ایم کیو ایم اور پی ٹی آئی کا بائیکاٹ

43

کراچی: پاکستان تحریک انصاف کے نااہل ہونے والے سینیٹر فیصل واوڈا کی خالی ہونے والی نشست پر سندھ اسمبلی میں ووٹنگ کا آغاز ہو گیا ہے۔

سینیٹ نشست کے لیے سندھ اسمبلی میں ووٹنگ کا آغاز صبح 9 بجے ہوا جو شام 4 بجے تک جاری رہے گا۔

وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے پہلا ووٹ کاسٹ کیا جبکہ دیگر اراکین اسمبلی اپنا ووٹ کاسٹ کرنےکے لیے اسمبلی پہنچ رہے ہیں۔

الیکشن کے لیے سندھ اسمبلی کے ہال کو پولنگ اسٹیشن بنایا گیا ہے جبکہ صوبائی الیکشن کمشنر ریٹرننگ افسر کے فرائض انجام دے رہے ہیں۔

سندھ سے سینیٹ نشست کے لیے پیپلز پارٹی کے نثار کھوڑو اور پی ٹی آئی کے آغا ارسلان مد مقابل ہیں تاہم پاکستان تحریک انصاف اور مرکز میں حکومت کی اتحادی جماعت ایم کیو ایم ووٹنگ نے ووٹنگ کے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے۔

سندھ اسمبلی میں سیاسی جماعتوں کے اراکین کی تعداد

سندھ اسمبلی کے ارکان کی کل تعداد 168 ہے جس میں سے 99 اراکین پیپلز پارٹی کے ہیں جبکہ سندھ اسمبلی میں پی ٹی آئی کے اراکین کی تعداد 30 اور ایم کیو ایم کے 21 اراکین ہیں۔

سندھ اسمبلی میں جی ڈی اے کے 14، تحریک لبیک پاکستان کے 3 اور ایم ایم اے کا ایک رکن ہے جبکہ سینیٹ الیکشن میں کامیابی کے لیے امیدوار کو 85 ووٹس کی ضرورت ہوگی۔

یاد رہے کہ الیکشن کمیشن نے دہری شہریت چھپانے پر پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل واوڈا کو نااہل قرار دیا تھا اور ان کی خالی نشست پر دوبارہ انتخابات کرانے کا اعلان کیا تھا۔