Official Website

’لمپی اسکن سے متاثر جانور کا گوشت یا دودھ انسانی صحت کے لیے مضر نہیں‘

30

 اسلام آباد: وزارت نیشنل فوڈ سیکیورٹی نے جانوروں میں لمپی اسکن بیماری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کے انسانی صحت پر کوئی مضر اثرات مرتب نہیں ہوتے۔

 وزارت نیشنل فوڈ سیکیورٹی نے مویشیوں میں پھیلنے والی لمپی اسکن بیماری کے حوالے سے اعلامیہ جاری کیا، جس میں بتایا گیا ہے کہ یہ بیماری بہاولپور، کراچی، جامشورو، حیدرآباد اور ٹھٹھہ کے جانوروں میں پائی گئی ہے۔

نیشنل فوڈ سیکیورٹی کے مطابق لمپی اسکن کے لوگوں کی صحت پر کوئی مضمرات نہیں ہیں اور نہ یہ بیماری جانوروں سے انسانوں میں منتقل ہوسکتی ہے، متاثرہ مویشیوں کا ابلا ہوا دودھ اور اچھی طرح پکا ہوا گوشت انسانی استعمال کے لیے محفوظ ہے۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ لمپی اسکن پر قابو پانے، پھیلاؤ کو روکنے کے لیے انیمل ہسبنڈری کمشنر نے صوبوں کو خط لکھ دیا ہے تاکہ اقدامات شروع کیے جائیں، پہلے سے دستیاب بھیڑ، بکری کی پاکس ویکسین لمپی اسکن وائرس کے خلاف موثر ہے۔

نیشنل فوڈ سیکیورٹی نے بتایا کہ جانوروں میں لمپی اسکن ، بیماری وائرس کی وجہ سے ہوتی ہے اور یہ مچھروں، مکھیوں اور کھٹمل کے کاٹنے سے پھیلتی ہے۔ اعلامیے میں مزید بتایا گیا ہے کہ حکومت لمپی اسکن ویکسین درآمد کرنے کے لیے فوری انتظامات کر رہی ہے۔