Official Website

نہ صرف تحریک عدم اعتماد ناکام ہوگی بلکہ اپوزیشن 2023ء کا الیکشن بھی ہارے گی، وزیراعظم

43

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اپوزیشن کا شکریہ کہ ان کی وجہ سے لوگ ٹماٹر پیاز کی قیمتیں بھول گئے، نہ صرف تحریک عدم اعتماد ناکام ہوگی بلکہ اپوزیشن 2023ء کا الیکشن بھی ہارے گی۔

اوورسیز پاکستانیوں کے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ مہنگائی کا سمندر ہے، سارا وقت ہم پر بوجھ پڑا رہتا تھا اور ہم سارا وقت سوچتے تھے کہ کیا کریں، آج میں اپوزیشن جماعتوں کا دل سے شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں کہ انہوں نے لوگوں کو ٹماٹر اور پیاز کی قیمتیں بھلا دیں، ان کی وجہ سے میری جماعت اکٹھی ہوگئی، اپوزیشن نے مجھ پر احسان کیا اب انہیں برا بھلا نہیں کہوں گا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف جنرل جیلانی کی چھتوں پر سریا لگاتے لگاتے وزیراعلیٰ بنا، فضل الرحمان تیس سال سے دین بیچ رہا ہے، فضل الرحمان کا نام ڈیزل ہم نے نہیں بلکہ ن لیگ کے ایک رنگ باز نے فضل الرحمان کا نام ڈیزل رکھا اور وہ اس لیے کہ فضل الرحمان ڈیزل کے پرمٹ کے نام پر پیسے بناتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی، ن لیگ اور فضل الرحمان ایک دوسرے کو چور کہتے تھے اور اب یہ ’’تھری اسٹوجیز‘‘ میرے خلاف جمع ہوگئے ہیں اور کہتے ہیں کہ ملک بچانا ہے، اگر انہیں ملک بچانا ہے تو اس سے بہتر ہے کہ وہ عمران خان کے ساتھ ڈوب جائیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ امریکا اپنے ملک میں بمباری اور ڈرون کی اجازت نہیں دیتا اور ہمارے ملک پر ڈرون حملے کیے جس میں کتنے بے گناہ مارے گئے جب کہ حکمران کچھ نہیں بولتے تھے جو کہ پیسے کے غلام ہیں، یہ لوگ اپنا پیسہ بچانے کے لیے ملک بیچ دیں گے، میں امریکا، برطانیہ اور بھارت کا مخالف نہیں، میں کسی ملک کے خلاف نہیں بلکہ اس کی پالیسیوں کے خلاف ہوں۔

انہوں نے کہا کہ ڈان لیکس میں ن لیگ نے بھارت کو پیغام دیا کہ ہماری فوج غلط ہے اور نواز شریف آپ کے ساتھ ہے، مودی نواز شریف کی تعریف کرتا تھا اور اس وقت کے آرمی چیف راحیل شریف کو دہشت گردوں کا سربراہ کہتا تھا اگر آج ایسا ہو تو یہ میرے لیے بڑے شرم کی بات ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ اوورسیز پاکستانی ملک کا اثاثہ ہیں، میں چاہتا ہوں اوورسیز پاکستانی ملک میں سرمایہ کاری کریں اسی لیے انہیں پانچ سال تک ٹیکس کی چھوٹ دی ہے، پاور آف اٹارنی ڈیجیٹل کرادی ہے اور اب انہیں مزید آسانیاں فراہم کریں گے۔

انہوں نے چیلنج کیا کہ ساڑھے تین سال کے ان مشکل حالات میں جو کام ہماری حکومت نے کیا گزشتہ کسی حکومت نے اتنا کام نہیں کیا، برآمدات بڑھائے بغیر کوئی ملک ترقی نہیں کرسکتا، آج پاکستان کی ریکارڈ ایکسپورٹ ہورہی ہیں جو ہماری توقعات سے بھی زیادہ ہیں اسی طرح ریمی ٹینس بھی بہت زیادہ ہوگئی ہیں جب کہ پاکستان کی تاریخ کی سب سے بڑی ٹیکس کلیکشن بھی ہم نے کی، میں ملک میں سالانہ آٹھ ہزار ارب سے زائد ٹیکس کلیکشن کرکے دکھاؤں گا۔

عمران خان نے کہا کہ پہلی بار ہوا ہے کہ ہم نے نبی کریمؐ کی شان میں گستاخی کے خلاف عالمی سطح پر مذمت کی بیانات دیے، اقوام متحدہ میں اس معاملے کو اجاگر کیا، فضل الرحمان نے جو اسلام کی دکان لگائی ہوئی ہے بتائیں کیا انہوں ںے کبھی مغرب کے کسی چپڑاسی سے بھی اس حوالے سے مذمت کی؟ ہم نے اسلامو فوبیا کو عالمی سطح پر اجاگر کیا، اسلامو فوبیا کو یہاں موجود پاکستانی نہیں جانتے بلکہ اوورسیز پاکستانی جانتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ ساری اپوزیشن کو چیلنج ہے کہ تم ان ہی کاموں میں ہمارا مقابلہ کرو، ہم ہر چیز میں تم سے آگے ہیں، ہم پہلی بار ملک میں تعلیمی نصاب ایک لے کر آئے ہیں، ہیلتھ انشورنس دی جو کہ غریب کا تصویر بھی نہیں، اسی لیے ڈاکوؤں کے ٹولے کو ڈر ہے کہ اگر یہ ایسا ہی کرتے رہے تو دوبارہ آجائیں گے، پچاس سال سے ملک میں کوئی ڈیم نہیں بنا، اب 2025ء تا 2028ء مہمند، داسو اور دیگر ڈیمز بن جائیں گے جو ملک کا پانی کا مسئلہ حل کریں گے۔