Official Website

اسلام آباد میں لوکل گورنمنٹ آرڈیننس 2021ء کالعدم قرار

44

اسلام آباد ہائی کورٹ نے اسلام آباد لوکل گورنمنٹ آرڈیننس 2021 کو کالعدم قرار دیتے ہوئے الیکشن کمیشن کو لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2015 کے تحت بلدیاتی الیکشن کرانے کا حکم دیا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے اسلام آباد لوکل گورنمنٹ آرڈیننس 2021 کے خلاف سابق یو سی چیئرمین سردار مہتاب، سی ڈی اے مزدور یونین اور سی ڈی اے آفیسرز ایسوسی ایشن سمیت دیگر درخواستوں پر فیصلہ سنایا۔

عدالت نے لوکل گورنمنٹ آرڈیننس 2021 کالعدم قرار دیتے ہوئے کہا کہ بلدیاتی الیکشن لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2015 کے تحت کرائے جائیں۔
درخواست گزاروں کی جانب سے بیرسٹر عمر اعجاز گیلانی، قاضی عادل، کاشف ملک اور دیگر وکلاء نے دلائل دیے جبکہ حکومتی وکیل نے بتایا تھا کہ 19 نومبر کو پارلیمنٹ کا سیشن ختم ہوا اور 23 نومبر کو آرڈیننس جاری ہوا۔

درخواستوں میں لوکل گورنمنٹ ایکٹ کی موجودگی میں آرڈیننس کے ذریعے نیا بلدیاتی نظام لاکر چیئرمین کا کردار محدود کرنے اور آرڈیننس کے باقاعدہ قانون نہ بننے کی صورت میں منتخب نمائندوں کے مستقبل پر سوالات اٹھائے گئے تھے۔